Wednesday, April 30, 2014

A Request For DUA

میرے ایل ایل بی پارٹ 2 کے پیپرز ہونے والے ہیں۔ تو پلیز پلیز پلیز میرے لیے دعا کیجئے گا۔۔
 آپ کی دعاؤں کا طالب: محمد طاھر رشید

contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.

Monday, April 30, 2012

ایک ضروری گزارش

پیلز 1 بار درود شریف پڑھیں, پھر نیچے *کومینٹس* میں جا کر بتائیں, یا مجھے اس نمبر03424100090   پر ایس ایم ایس کرکے بتائیں کہ آپ نے کتنی بار درود شریف پڑھا ہے تاکہ میں اس کو اوپر ایڈ کر دوں, الله آپ کو اس نیک کام کا اجر دے آمین...!
اب تک ماشا الله سے  ""479772"" بار درود شریف پڑھا جا چکاہے۔


Please read the "DAROOD SHAREEF" 1 or more times, then tell me through the comments or on my mobile number +923424100090 then i add it. Mashallah at this time we collect Darood Sahreef is "479772".

contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.

Thursday, November 17, 2011

فہرست

.ستمبر میں پہلی 100 حدیثیں, اکتوبر میں 101 تا 600, نومبر میں 601 تا 1100, اور دسبر میں 1101 تا 1600 حدیثیں ہیں




اور سال 2011 سے جنوری میں 1601 تا 2100,  فروری میں 2101 تا 2600,  مارچ میں 2601 تا 3100,  اپریل میں 3101 تا 3600,  مئی میں 3601 تا 4100,  جون میں 4101 تا 4600,  جولائی میں 4601 تا 5100,  اگست میں 5101 تا 5600,  ستمبر میں 5601 تا 6100, اکتوبر میں 6101 تا 6600, اور نومبر میں 6601 تا 7049 تک حدیثیں ہیں.


صحیئ بخاری میں ٹوٹل 7049 حدیثیں ہیں.



آپ یہاں پر حدیثیں کتاب کے لہاظ سے نیچے دی گئی فہرست کے مطابق بھی ڈھونڈ سکتے ہیں۔

No:                     کتب                     حدیث نمبر
1:                          1 to 6                      وحی کا بیان
2:                          7 to 56                    ایمان کا بیان
3:                         57 to 134                 علم کا بیان
4:                        135 to 243                وضو کا بیان
5:                        244 to 287                غسل کا بیان
6:                       288 to 324                 حیض کا بیان
7:                       325 to 338                 تیمم کا بیان
8:                       339 to 494                 نماز کا بیان
9:                       495 to 573                 نمازوں کےاوقات اور انکی فضیلت کا بیان
10:                     574 to 829                 اذان کا بیان
11:                     830 to 893                 جمعہ کا بیان
12:                     894 to 899                 نماز خوف کا بیان
13:                     900 to 935                 عیدین کا بیان
14:                     936 to 949                 وتر کا بیان
15:                     950 to 980                 نماز استسقاء کا بیان
16:                     981 to 1016               نماز کسوف کا بیان
17:                   1017 to 1160               نماز قصر کا بیان
18:                   1161 to 1309               جنازوں کا بیان
19:                   1310 to 1420               زکوۃ کا بیان
20:                   1421 to 1654               حج کا بیان
21:                   1655 to 1768               عمرہ کا بیان
22:                   1769 to 1915               روزے کا بیان
23:                   1916 to 2092               خرید و فروخت کا بیان
24:                   2093 to 2108               بیع سلم کا بیان
25:                   2109 to 2136               شفعہ کا بیان
26:                   2137 to 2146               حوالہ کا بیان
27:                   2147 to 2163               وکالہ کا بیان
28:                   2164 to 2189               کھیتی اور بٹائی کے متعلق جو روایتیں منقول ہیں
29:                   2190 to 2219               مساقات کا بیان
30:                   2220 to 2242               قرض لینےاور قرض ادا کرنے اور تصرف سے روک دینے اور مفلس ہوجانے کا بیان
31:                   2243 to 2257               جھگڑوں کا بیان
32:                   2258 to 2334               گری پڑی چیز اٹھانے کا بیان
33:                   2335 to 2383               رہن کا بیان
34:                   2384 to 2453               مکاتب کرنے کا بیان
35:                   2454 to 2503               گواہیوں کا بیان
36:                   2504 to 2522               صلح کا بیان
37:                   2523 to 2546               شرطوں کا بیان
38:                   2547 to 2586               وصیتوں کا بیان
39:                   2587 to 2958               جہاداورسیرت رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وآلہ وسلم
40:                   2959 to 3087               مخلوقات کی ابتداء کا بیان
41:                   3088 to 3664               انبیاء علیہم السلام کا بیان
42:                   3565 to 4126               غزوات کا بیان
43:                   4127 to 4705               تفاسیر کا بیان
44:                   4706 to 4884               نکاح کا بیان
45:                   4885 to 4968               طلاق کا بیان
46:                   4969 to 4990               خرچ کرنے کا بیان
47:                   4991 to 5079               کھانے کا بیان
48:                   5080 to 5088               عقیقہ کا بیان
49:                   5089 to 5157               ذبیحوں اور شکار کا بیان
50:                   5158 to 5185               قربانیوں کا بیان
51:                   5186 to 5249               مشروبات کا بیان
52:                   5250 to 5287               بیماریوں کا بیان
53:                   5288 to 5379               طب کا بیان
54:                   5380 to 5560               لباس کا بیان
55:                   5561 to 5809               ادب کا بیان
56:                   5810 to 5883               اجازت لینے کا بیان
57:                   5884 to 5985               دعاؤں کا بیان
58:                   5986 to 6155               دل کو نرم کرنے والی باتوں کا بیان
59:                   6156 to 6181               تقدیر کا بیان
60:                   6182 to 6260               قسموں اور نذروں کا بیان
61:                   6261 to 6277               قسموں کے کفارے کا بیان
62:                   6278 to 6321               فرائض کی تعلیم کا بیان
63:                   6322 to 6352               حدود اور حدود سے بچنے کا بیان
64:                   6353 to 6399               جنگ کرنے کا بیان
65:                   6400 to 6452               خون بہا کا بیان
66:                   6453 to 6472               مرتدوں اور دشمنوں سے توبہ کرانا اور ان سے جنگ کرنا اور اس آدمی کا گناہ جس نے اﷲ کے ساتھ شرک کیا اور دنیا و آخرت میں اس کی سزا کا بیان
67:                   6473 to 6484               جبر کرنے کا بیان
68:                   6485 to 6512               حیلوں کا بیان
69:                   6513 to 6573               خواب کی تعبیر کا بیان
70:                   6574 to 6650               فتنوں کا بیان
71:                   6651 to 6730               احکام کا بیان
72:                   6731 to 6771               آرزو کرنے کا بیان
73:                   6772 to 6868               کتاب اور سنت کو مضبوطی سے پکڑنے کا بیان
74:                   6869 to 7049               توحید کا بیان



contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.

امام بخاری رحمتہ اللہ علیہ کے حالات زندگی


امام بخاری رحمتہ اللہ علیہ کا سلسلہ نسب یہ ہے ۔
ابو عبداللہ محمد (امام بخاری) بن اسما عیل بن ابراہیم بن مغیرہ بردزبہ البخاری الجعفی ۔

امام بخاری کے والد کا نام اسماعیل رح  کو جلیل القدر علماء اور امام مالک کی شاگردی کا شرف بھی حاصل ہے امام بخاری 13شوال194ھ کو بعد از نماز جمعہ بخارہ میں پیدا ہوئے امام بخاری ابھی کم سن ہی تھے کہ شفیق باپ کا سایہ سر سے اٹھ گیا تعلیم وتربیت کے لیے صرف والدہ ہی کا سہارا باقی رہ گیا۔ شفیق باپ کے اٹھ جانے کے بعد ماں نے امام بخاری رح کی پرورش شروع کی اور تعلیم و تربیت کا اہتمام کیا امام بخا ری رح نے ابھی اچھی طرح آنکھیں کھولی بھی نہ تھیں کہ بینائی جاتی رہی اس المناک سانحہ سے والدہ کو شدید صدمہ ہوا ۔انہو ں نے بارگاہ الہٰی میں آزاری کی، عجز ونیاز کا دامن پھیلا کر اپنے لاثانی بیٹے کی بینائی کے لیے دعائیں مانگیں ایک مضطرب، بے قرار اور بے سہارا ماں کی دعائیں قبول ہوئیں، انہوں نے ایک رات حضرت ابراہیم خلیل اللہ علیہ السلا م کو خواب میں دیکھا فرما رہے تھے، جا ایک نیک خو! تیری دعائیں قبول ہوئیں۔ تمھارے نور نظر اور لخت جگر کو اللہ تعالی نے پھر نور چشم سے نواز دیا ہے صبح اٹھ کر دیکھتی ہیں کہ بیٹے کی آنکھو ں میں نور لوٹ آیا ہے۔

امام بخاری رحمۃ اللہ علیہ کو اپنے والد کی میراث سے کافی دولت ملی تھی ۔آپ رح اس سے تجارت کیا کرتے تھے اس آسودہ حالی سے آپ نے کبھی اپنے عیش وعشرت کا اہتمام نہیں کیا جو کچھ آمدنی ہوتی طلب علم کے لیے صرف کرتے غریب اور نادار طلبا کی امداد کر تے غریبوں اور مسکینوں کی  مشکلا ت میں ہاتھ بٹاتے۔ ہر قسم کے معاملات میں آپ رحمتہ اللہ علیہ بے حد احتیاط برتتے تھے۔

حضرت وارقہ رح فرما تے ہیں امام بخاری بہت کم خوراک لیتے تھے طا لب علموں کے ساتھ بہت احسان کرتے اور نہایت ہی سخی تھے۔ امام بخاری رح کو اللہ تعالی نے غیر معمولی حافظہ اور ذہن عطا کیا تھا۔

آپ رح  کی سب سے بلند پایہ تصنیف صحیح بخاری ہے آپ نے بخاری کی ترتیب وتالیف میں صرف علمیت زکاوت اور حفظ ہی کا زور خرچ نہیں کیا بلکہ خلوص، دیانت، تقویٰ اور طہارت کے بھی آخری مرحلے کرڈالے اور اس شان سے ترتیب وتدوین کا آغاز کیا کہ جب ایک حدیث لکھنے کا ارادہ کرتے تو پہلے غسل کرتے دو رکعت نماز استخارہ پڑ ھتے۔ سخت ترین محنت اور دیدہ ریزی کے بعد سولہ سال کی طویل مدت میں یہ کتاب زیور تکمیل سے آراستہ ہوئی اور ایک ایسی تصنیف عالم وجود میں آ گئی جس کا یہ لقب قرار پایا (اصح الکتب بعد کتاب اللہ)  یعنی اللہ تعالی کی کتاب (قرآن مجید)  کے بعد سب سے زیادہ صحیح کتاب ہے۔

امت کے ہزاروں محدثین نے سخت کسوٹی پر کسا، پرکھا اور جانچا مگر جو لقب اس  مقدس تصنیف کے لیے من جانب اللہ مقدر ہو چکا تھا وہ پتھر کی کبھی نہ مٹنے والی لکیریں بن گیا۔

آپ رح  وہی حدیث بیان کرتے تھے جس نے ثقہ سے مشہور صحابی تک روایت کی ہو اور معتبر ثقات اس حدیث میں اختلاف نہ کرتے ہوں اور سلسلہ اسناد متصل ہو اگر صحابی سے دو شخص روای ہوں تو بہتر ورنہ ایک معتبر راوی بھی کافی ہے۔

بخاری شریف کے علا وہ بھی امام صاحب کی 22 اہم اور بلند پایہ تصانیف ہیں آپ کی مجالس درس زیادہ تر بصرہ ،بغداد اور بخارہ میں رہیں لیکن دنیا کا غالبا کوئی گوشہ ایسا نہیں جہاں امام بخاری کے شاگرد سلسلہ بسلسلہ نہ پہنچے ہوں۔

وفات۔  محمد بن ابی حغا تم وراق رح  فرماتے ہیں میں نے غالب بن جبریل سے سنا کہ امام بخاری رح  خرتنگ میں انہیں کے پاس تشریف فرما تھے۔ امام بخاری رح چند روز وہاں رہے پھر بیمار ہوگئے اس وقت ایک ایلجی آیا اور کہنے لگا کے سمرقند کے لوگوں نے آپ کو بلایا ہے امام بخاری نے قبول فرمایا موزے پہنے عمامہ باندھا بیس قدم گئے ہوں  گے کہ انہوں نے کہاں مجھ کو چھوڑ دو مجھے ضعف ہوگیا ہے۔  ہم نے چھوڑ دیا امام بخاری نے کئی دعائیں پڑھیں پھر لیٹ گئے آپ رح کے بدن سے بہت پسینہ نکلا دس شوال ٢٥٦ھ بعد نماز عشاء آپ نے داعی اجل کو لیبک کہا اگلے روز جب آپ رح کےانتقال کی خبر سمرقند اور اطراف میں مشہور ہوئی تو کہرام مچ گیا جنازہ اٹھا تو شہر کا ہر شخص جنازہ کے ساتھ تھا نماز ظہر کے بعد اس علم وعمل اور زہد اور تقویٰ کے پیکر کو سپرد خاک کردیا گیا جب قبر میں رکھا تو آپ رح کی قبر میں مشک کی طرح خو شبو پھوٹی اور بہت دنوں تک  یہ خو شبو با قی رہی۔ انا للہ وانا الیہ راجعون

        (کل من علیھا فان ویبقی وجہ ربک ذوالجلال والاکرام)
       (زمین پر جو ہیں سب فنا ہو نے والے ہیں صرف تیرے رب کی ذات جو عظمت و عزت والی باقی رہ جائے گی)


contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.

Wednesday, November 2, 2011

Jild3,Bil-lihaaz Jild Hadith no:2398,TotalNo:7049


کتاب حدیث
صحیح بخاری
کتاب
توحید کا بیان
باب
اللہ کا قول کہ ہم ترازو کوٹھیک ٹھیک رکھیں گے۔
حدیث نمبر
7049
حَدَّثَنِي أَحْمَدُ بْنُ إِشْکَابٍ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ فُضَيْلٍ عَنْ عُمَارَةَ بْنِ الْقَعْقَاعِ عَنْ أَبِي زُرْعَةَ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ قَالَ قَالَ النَّبِيُّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ کَلِمَتَانِ حَبِيبَتَانِ إِلَی الرَّحْمَنِ خَفِيفَتَانِ عَلَی اللِّسَانِ ثَقِيلَتَانِ فِي الْمِيزَانِ سُبْحَانَ اللَّهِ وَبِحَمْدِهِ سُبْحَانَ اللَّهِ الْعَظِيمِ
احمد بن اشکاب، محمد بن فضیل، عمارہ بن قعقاع، ابوزرعہ، حضرت ابوہریرہ رضی ﷲ تعالیٰ عنہ سے روایت کرتے ہیں، انہوں نے بیان کیا کہ آنحضرت صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ دو کلمے ایسے ہیں جو خدا کو بہت محبوب ہیں اور زبان پر نہا یت ہلکے ہیں مگر میزان (تول) میں بہت بھاری ہیں, وہ کلمات یہ ہیں ﴿سُبْحَانَ اللَّهِ وَبِحَمْدِهِ سُبْحَانَ اللَّهِ الْعَظِيمِ﴾-



contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.

Jild3,Bil-lihaaz Jild Hadith no:2397,TotalNo:7048


کتاب حدیث
صحیح بخاری
کتاب
توحید کا بیان
باب
فاجر اور منافق کے قرآن پڑھنے کا بیان الخ
حدیث نمبر
7048
حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ حَدَّثَنَا مَهْدِيُّ بْنُ مَيْمُونٍ سَمِعْتُ مُحَمَّدَ بْنَ سِيرِينَ يُحَدِّثُ عَنْ مَعْبَدِ بْنِ سِيرِينَ عَنْ أَبِي سَعِيدٍ الْخُدْرِيِّ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ عَنْ النَّبِيِّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ يَخْرُجُ نَاسٌ مِنْ قِبَلِ الْمَشْرِقِ وَيَقْرَئُونَ الْقُرْآنَ لَا يُجَاوِزُ تَرَاقِيَهُمْ يَمْرُقُونَ مِنْ الدِّينِ کَمَا يَمْرُقُ السَّهْمُ مِنْ الرَّمِيَّةِ ثُمَّ لَا يَعُودُونَ فِيهِ حَتَّی يَعُودَ السَّهْمُ إِلَی فُوقِهِ قِيلَ مَا سِيمَاهُمْ قَالَ سِيمَاهُمْ التَّحْلِيقُ أَوْ قَالَ التَّسْبِيدُ
ابوالنعمان، مہدی بن میمون، محمد بن سیرین، معبد بن سیرین، حضرت ابوسعید خدری رضی ﷲ تعالیٰ عنہ نبی صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم سے روایت کرتے ہیں آپ نے فرمایا مشرق کی طرف سے کچھ لوگ نکلیں گے اور قرآن پڑھیں گے جو ان کی ہنسلیوں سے نیچے نہیں اترے گا وہ لوگ دین سے اس طرح نکل جائیں گے جس طرح تیر شکار سے پار ہو جاتا ہے، وہ لوگ لوٹ کر دین میں نہیں آئیں گے جب تک کہ تیر اپنی جگہ پر نہ لوٹ آئے، کسی نے پوچھا ان کی نشانی کیا ہے آپ نے فرمایا کہ سر منڈانا (آپ نے تخلیق یا تسبید فرمایا راوی کو شک ہے) -



contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.

Jild3,Bil-lihaaz Jild Hadith no:2396,TotalNo:7047


کتاب حدیث
صحیح بخاری
کتاب
توحید کا بیان
باب
فاجر اور منافق کے قرآن پڑھنے کا بیان الخ
حدیث نمبر
7047
حَدَّثَنَا عَلِيٌّ حَدَّثَنَا هِشَامٌ أَخْبَرَنَا مَعْمَرٌ عَنْ الزُّهْرِيِّ ح و حَدَّثَنِي أَحْمَدُ بْنُ صَالِحٍ حَدَّثَنَا عَنْبَسَةُ حَدَّثَنَا يُونُسُ عَنْ ابْنِ شِهَابٍ أَخْبَرَنِي يَحْيَی بْنُ عُرْوَةَ بْنِ الزُّبَيْرِ أَنَّهُ سَمِعَ عُرْوَةَ بْنَ الزُّبَيْرِ قَالَتْ عَائِشَةُ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا سَأَلَ أُنَاسٌ النَّبِيَّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَنْ الْکُهَّانِ فَقَالَ إِنَّهُمْ لَيْسُوا بِشَيْئٍ فَقَالُوا يَا رَسُولَ اللَّهِ فَإِنَّهُمْ يُحَدِّثُونَ بِالشَّيْئِ يَکُونُ حَقًّا قَالَ فَقَالَ النَّبِيُّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ تِلْکَ الْکَلِمَةُ مِنْ الْحَقِّ يَخْطَفُهَا الْجِنِّيُّ فَيُقَرْقِرُهَا فِي أُذُنِ وَلِيِّهِ کَقَرْقَرَةِ الدَّجَاجَةِ فَيَخْلِطُونَ فِيهِ أَکْثَرَ مِنْ مِائَةِ کَذْبَةٍ
علی، ہشام، معمر، زہری، ح، احمد بن صالح، عنبسہ، یو نس، ابن ہشاب، یحٰیی بن عروہ، ابن زبیر رضی ﷲ تعالیٰ عنہ حضرت عائشہ سے روایت کرتے ہیں کہ حضرت عائشہ رضی ﷲ تعالیٰ عنہ نے بیان کیا کہ کچھ لوگوں نے آنحضرت صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم سے کاہنوں کے متعلق پوچھا آپ نے فرمایا کہ یہ لوگ کچھ نہیں ہیں (یعنی ان کا کوئی اعتبار نہیں ہے) لوگوں نے عرض کیا کہ یا رسول ﷲ وہ لوگ بعض دفعہ ایسی بات کہتے ہیں جو سچی نکلتی ہے، آنحضرت صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ یہ بات خدا کی طرف سے ہوتی ہے جس کو شیطان (سن کر) یاد رکھتا ہے اور اسکو اپنے دوست کے کان  میں کٹ کٹ کر کے ڈال دیتا ہے جس طرح مرغی کٹ کٹ کر تی ہے، پھر یہ اس میں سو سے زیادہ جھوٹ ملا دیتے ہیں-



contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.

Jild3,Bil-lihaaz Jild Hadith no:2395,TotalNo:7046


کتاب حدیث
صحیح بخاری
کتاب
توحید کا بیان
باب
فاجر اور منافق کے قرآن پڑھنے کا بیان الخ
حدیث نمبر
7046
حَدَّثَنَا هُدْبَةُ بْنُ خَالِدٍ حَدَّثَنَا هَمَّامٌ حَدَّثَنَا قَتَادَةُ حَدَّثَنَا أَنَسٌ عَنْ أَبِي مُوسَی رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ عَنْ النَّبِيِّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ مَثَلُ الْمُؤْمِنِ الَّذِي يَقْرَأُ الْقُرْآنَ کَالْأُتْرُجَّةِ طَعْمُهَا طَيِّبٌ وَرِيحُهَا طَيِّبٌ وَمَثَلُ الَّذِي لَا يَقْرَأُ کَالتَّمْرَةِ طَعْمُهَا طَيِّبٌ وَلَا رِيحَ لَهَا وَمَثَلُ الْفَاجِرِ الَّذِي يَقْرَأُ الْقُرْآنَ کَمَثَلِ الرَّيْحَانَةِ رِيحُهَا طَيِّبٌ وَطَعْمُهَا مُرٌّ وَمَثَلُ الْفَاجِرِ الَّذِي لَا يَقْرَأُ الْقُرْآنَ کَمَثَلِ الْحَنْظَلَةِ طَعْمُهَا مُرٌّ وَلَا رِيحَ لَهَا
ہدبہ بن خالد، ہمام، قتادہ ، انس رضی ﷲ تعالیٰ عنہ حضرت ابوموسی ٰ رضی ﷲ تعالیٰ عنہ آنحضرت صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم سے روایت کرتے ہیں کہ آپ نے فرمایا مومن کی مثال جو قران پڑھتا ہے چکوترے کی طرح ہے کہ اس کا مزہ اچھا ہے اور اس کی بو بھی خوشگوار ہے اور اس کی مثال جو قرآن نہیں پڑھتا کھجور کی طرح ہے کہ اس کا مزہ تو اچھا ہے لیکن اس میں خوشبو نہیں ہے اور بدکار کی مثال جو قرآن پڑھتا ہے ریحان کی طرح ہے کہ اس میں خوشبو تو ہے لیکن اس کا مزہ تلخ ہے اور بدکار کی مثال جو کہ قرآن نہیں پڑھتا اندرائن کی طرح کہ اس کا مزہ بھی تلخ ہے اور اس میں خوشبو بھی نہیں-



contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.

Jild3,Bil-lihaaz Jild Hadith no:2394,TotalNo:7045


کتاب حدیث
صحیح بخاری
کتاب
توحید کا بیان
باب
اللہ کا قول کہ اللہ نے تم کو اور جو تم کرتے ہوپیدا کیا؟
حدیث نمبر
7045
حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْعَلَائِ حَدَّثَنَا ابْنُ فُضَيْلٍ عَنْ عُمَارَةَ عَنْ أَبِي زُرْعَةَ سَمِعَ أَبَا هُرَيْرَةَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ قَالَ سَمِعْتُ النَّبِيَّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ قَالَ اللَّهُ عَزَّ وَجَلَّ وَمَنْ أَظْلَمُ مِمَّنْ ذَهَبَ يَخْلُقُ کَخَلْقِي فَلْيَخْلُقُوا ذَرَّةً أَوْ لِيَخْلُقُوا حَبَّةً أَوْ شَعِيرَةً
محمد بن علاء، ابن فضیل، عمارہ ، ابوزرعہ، ابوہریرہ رضی ﷲ تعالیٰ عنہ سے روایت کرتے ہیں، انہوں نے بیان کیا کہ میں نے نبی صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا کہ ﷲ نے فرمایا کہ اس شخص سے بڑھ کر کون ظالم ہو گا جو میری طرح پیدا کرنا چاہے، اگر ایسا ہے تو وہ ایک چنا ہی پیدا کر کے دکھائے یا ایک جو پیدا کر کے دکھائے-



contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.

Jild3,Bil-lihaaz Jild Hadith no:2393,TotalNo:7044


کتاب حدیث
صحیح بخاری
کتاب
توحید کا بیان
باب
اللہ کا قول کہ اللہ نے تم کو اور جو تم کرتے ہوپیدا کیا؟
حدیث نمبر
7044
حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ عَنْ أَيُّوبَ عَنْ نَافِعٍ عَنْ ابْنِ عُمَرَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا قَالَ قَالَ النَّبِيُّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ إِنَّ أَصْحَابَ هَذِهِ الصُّوَرِ يُعَذَّبُونَ يَوْمَ الْقِيَامَةِ وَيُقَالُ لَهُمْ أَحْيُوا مَا خَلَقْتُمْ
ابوالنعمان، حماد بن زید، ایوب، نا فع، حضرت ابن عمر رضی ﷲ تعالیٰ عنہ سے روایت کرتے ہیں انہوں نے بیان کیا کہ نبی صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا ان صورتوں کو بنانے والوں کو قیامت کے دن عذاب دیا جائے گا اور ان سے کہا جائے گا جو تم نے پیدا کیا ہے اس میں جان ڈالو-



contributed by MUHAMMAD TAHIR RASHID.